image

اے ایم ایل پالیسی A

اینٹی منی لانڈرنگ پالیسی

یہ پالیسی اُن معیارات کو تہ کرتی ہےاور اُن اصولوں کے مطابق تیار کی گئ ہے جو اینٹی منی لاننڈرنگ اور انسدادِ دہشتگردی فایننسنگ کی لیئے استعمال ہوتے ہیں (اب کے بعد اِن کو قوانین کہا جائے گا)۔ اس پالیسی میں منی لانڈرنگ کا زکر کرنے کودہشت گردی کی فنڈنگ بھی کہا جا سکتا ہے

جائزہ

قوانین کی تعمیل کرنے والی پالیسیوں اور طریقہ کار کو برقرار رکھنے کے لۓ ہم پر ایک مسلسل ذمہ داری ہے جس کا مقصد منی لانڈرنگ سے مقابلہ کرنے کا ہے. اس پالیسی اور متعلقہ طریقہ کار کو مناسب انتظام کے کنٹرول کی طرف سے حمایت کی جاسکتی ہے، اسٹاف سے شیئر کی جاتی ہے اور اُن سےبات چیت کی جاتی ہے. کویسٹر سولوشن ایل ایل سی(کمپنی) خطرے پر مبنی نقطہ نظر اختیار کرے گی، منی لانڈنگ کے خطرے کی روشنی میں لئیے جانے والے اقدامات مختلف ہوتےہیں۔.

منی لانڈرنگ کی روک تھام کے طریقے
  • مانیٹرنگ
  • صارفین کے ملٹیول شناخت؛ بشمول آئی ایم اے کی شناخت۔ اِن معلومات کی تصدیق کے لیئے کوئ انفارمیشن نہیں لی جاتی۔ معیاری ڈیو ڈیلیجنس، ایڈوانس ڈیو ڈیلیجنس (ایسے موقع پر مانگی جاتی ہیں جب کسٹمر اور منصوعات و خدمات مل کر ایک بڑا خطرہ پیش کر سکتی ہیں
  • منی لانڈرنگ کے علم یا شکایات کی شناخت اور رپورٹنگ؛
  • ریکارڈ رکھنا

معاون پالیسیوں اور کنٹرولز

اندرونی پالیسیز اور طریقہ کار

کمپنی کو اندرونی پالیسیوں اور طریقہ کار کو برقرار رکھنا چاہیے

  • اپنے کسٹمر (کے وای سی) اور محتاج کی جانبداری جانیں؛
  • رپورٹنگ؛
  • ریکارڈ رکھیے؛
  • اندرونی مینجمنٹ کنٹرول؛
  • خطرے کی تشخیص اور انتظام؛
  • تعمیل اور نگرانی کا انتظام؛ اور
  • ایسی پالیسیوں اور طریقہ کار کے اندرونی مواصلات
کمپنی کی پالیسیوں اور طریقہ کار کو خطرے پر مبنی نقطہ نظر لے جانا چاہئے. کمپنی کی پالیسیوں اور طریقہ کار کو لازمی ہے
  • پیچیدہ یا غیر معمولی بڑے ٹرانزیکشنز کی تصدیق کو یقینی بنائیں، یا ٹرانزیکشن کے غیر معمولی نمونہ، کی شناخت اور جانچ پڑتال کریں؛
  • ایسے اضافی اقدامات کی وضاحت کریں جو مصنوعات اور ٹرانزیکشنز کے استعمال کے لیئے نام نہاد کیوضاحت نا کرنے کی حمایت کرتے ہیں

کمپنی کے سینئر مینیجرز اس بات کا یقین کرنے کے لئے ذمہ دار ہیں کہ کمپنی کی پالیسیوں اور طریقہ کار کو مؤثر طریقے سے لاگو کیا جاسکتا ہے تاکہ کمپنی منی لانڈرنگ کے خطرے کی مناسب تشخیص اور انتظام کو یقینی بنائے

نامزد افسر

کمپنی کی پالیسیوں اور طریقہ کار کو ایک ایسے فرد کو نامزد کرنا ہو گا
  • کمپنی کے عملے سے مشکوک سرگرمی کا افشاء حاصل کریں؛ اور متعلقہ حکام کو مشکوک سرگرمی کی رپورٹ؛
  • یقینی بنائیں کہ تمام عملہ اِس نامزد افسر کو مشکوک سرگرمی کا اظہار کر سکے؛
  • اس بات کو یقینی بنانا ہے کہ نامزد افسر اس طرح کے افشاء کو سمجھتا ہے اور اگر پیسے لانڈرنگ کی کسی بھی سرگرمی کو ہوتے پاتا ہے تو متعلقہ اِداروں کو اِطلاع کرے۔
  • یقینی بنائیں کہ متعلقہ اتھارٹی کی منظوری کے بغیر اِیسی کسی بھی ٹرانسیکشن کی تکمیل نا ہو سکے۔
  • علم’ کا مطلب یہاں پر منی لانڈرنگ سرگرمی کا علم ہے جو نامزد افسر کے پاس کمپنی کے ساتھ کام کرتے ہوے آیا. شق کا

    مطلب یہ ہے کہ معلومات یا حالات پر مبنی رائے لیکن کسی بھی ثبوت یا ثبوت کے بغیر

کنٹرول اور مواصلات

کمپنی کو اس بات کا یقین ہونا چاہیے کہ ممکنہ منی لانڈرنگ کے بارے میں مکمل آگاہ ہونے کے لۓ اندرونی مینجمنٹ کنٹرول رکھے جائیں۔

اندرونی کنٹرولوں میں شامل ہونا چاہئے
  • سینئر مینجمنٹ کی ذمہ داریوں کی شناخت؛
  • منی لانڈرنگ کے خطرات پر سینئر مینجمنٹ کو معلومات کی باقاعدہ فراہمی؛
  • پالیسیوں اور طریقہ کار پر متعلقہ عملے کی تربیت؛
  • رِسک پالیسیوں اور طریقہ کار کی دستاویزی؛

کمپنی کو اپنی پالیسیوں، طریقہ کار اور انتظامی کنٹرولوں کا باقاعدگی سے جائزہ لینے کے لۓ یہ یقینی بنانا چاہئے کہ منی لانڈرنگ کے خطرات کی آگاہی ہوتی رہے

رسک پر مبنی اپروچ

خطرے کی بنیاد پر نقطہ نظر ایک ایسا نقطہ نظر ہے جس میں منی لانڈرنگ کے خطرے کو مینج کرنے کے لئے مؤثر لاگت اور مناسب طریقے ہوتے ہیں۔. خطرے پر مبنی نقطہ نظر کو لاگو کرنے میں، کمپنی کو گاہک کی طرف سےممکنہ خطرہ کو زہن میں رکھنا چاہیے۔

  • مندرجہ ذیل گاہکوں اور رویے کو خطرے سے متعلق سمجھا جانا چاہئے
    1. یوروپی یونین کی مجموعی فہرست
    2. یورپی یونین دہشت گردی کی فہرست
    3. مالیاتی ایکشن ٹاسک فورس۔ غیر کوآپریٹو ممالک اور دہشت گرد
    4. ۔برطانیہ کی ملکہ کا خزانہ- بینک آف انگلینڈ کے نام سے بھی جانا جاتا ہے- اس کی مجموعی فرہست
    5. برطانیہ کی ملکہ کا خزانہ - سرمایہ کاری بان کی فہرست
    6. سب سے زیادہ مطلوب افراد کی انٹرپول ی فہرست - حالیہ واقعات کی ریڈ الرٹ
    7. غیر ملکی اثاثوں کے کنٹرول کے لئیے امریکہ کا ادارہ کی لسٹ
    8. سینکشنڈ ممالک کےلیے فارن افس کی لسٹ
    9. امریکی ریاست خارجہ کی دہشت گردی کے خاتمے کی فہرست
    10. قوام متحدہ کی منظوری کی فہرست
  • اگر کسٹمر کا جواب واضح نہیں ہے یا اس سے بھی کوئی جواب نہیں ہے
  • گر کسٹمر کا رویہ غیر معمولی ہے
  • ر کسٹمر نے غیر معمولی طور پر ٹرانزیکشن ماڈل کو تبدیل کیا ہے
  • اگر گاہک فنڈز کے بارے میں معلومات فراہم کرنے کے لئے ناگزیر ہے
  • اگر گاہک کمپنی کی مصنوعات اور خدمات کو استعمال کرنے کے لئے رجسٹریشن کرتے وقت ضروری کافی ذاتی معلومات فراہم کرنے کی ضرورت کو مسترد کرنے کی کوشش کرتی ہے
  • اگر گاہک بہت زیادہ فیس دے کر فنڈز نکالنے چاہتا ہے
  • اگر گاہک رشوت دینے چاہتا ہے پیسے نکالنے کے عمل کو تیز کرنے کے لئے
  • اگر گاہک اُس سے زیادہ رقم جمع کرتا ہے جتنے کی توقع ہوتی ہے (اس کی پروفائل کے مطابق)
  • اگر جمع شدہ رقم کی رقم اس کی پروفائل کی سرگزشت سے متعلق نہیں ہے
  • اگر گاہک کسی اور کسٹمر کو فنڈ کی منتقلی کرنے کی کوشش کرتا ہے تو اگر ٹرانزیکشن کے لئے کوئی متوازن اقتصادی منطق نہیں ہے
  • اگر کسٹمر اس کی شناخت کے لئے ناگزیر نہیں ہے ، درخواست کے باوجود
  • اگر گاہک کمپنی کے aml/tcf پالیسی میں زیادہ دلچسپی لیتا ہے
  • اگر صارف کسی بھی مصنوعات یا سروس کو خریدے کے بغیر جمع کروائ گئی رقم ۲۴ گنٹھے میں واپس چاہتا ہے
  • اگر گاہک اس طرح کے ایکٹ کے ذریعہ حاصل کردہ جرائم یا ملکیت کے بارے میں بات کرتا ہے
  • اگر گاہک کمپنی کی مصنوعات اور خدمات کو استعمال کرنے کے لئے جعلی دستاویزات جمع کردیتا ہے؛
  • اگر ایک نیا کسٹمر ایک بڑی ٹرانزیکشن کرتا ہے؛
  • اگر کسٹمر کوئ پبلک یا سرکاری حیثیت رکھتا ہے؛
  • اگر کسٹمر منی لانڈرنگ کے اعلی خطرے کے لئے جانا جاتا ہے دائرہ کاروں میں کام کر رہا ہے
  • گر کلائنٹ کے رویے کا خطرہ کافی ہے
  • اگر گاہک کسی اور فرد کی طرف سے کام کرنے کے لئے ظاہر ہوتا ہے؛
  • اگر گاہک کسی بھی نقصان سے قطراطا ہے
کمپنی کو کاروباری ٹرانزیکشن کے پیٹرن کے بارے میں آگاہ کرکے پیسے کے خطرے کی نگرانی کرنا چاہئے، بشمول
  • موجودہ گاہک کے کاروبار کے غیر معمولی اضافہ؛
  • ٹرانسیکشن جو گاہک کی مشہور سرگرمی سے متعلق نہیں ہیں؛
  • وقت کے خاص نکات پر سرگرمی میں غیر معمولی اضافہ؛ اور
  • گاہکوں یا ٹرانزیکشنز کے نا واقف یا غیر متنوع قسم
خطرے کی بنیاد پر کنٹرول کے طریقہ کار میں شامل ہیں
  • کسٹمر کی شناخت؛
  • کسٹمر کی شناخت کی توثیق؛ اور
  • اضافی کسٹمر کی شناخت یا اعلی خطرے کے معاملے میں کسٹمر کی وجہ سے محتاط کو نافذ کرنا

کسٹمر کی جانچ، شناخت، نگرانی اور پابندیاں

کسٹمر کی جابچ

کسٹمر کی جانچ کی وجہ گاہکوں کی شناخت ہے اور اپنی شناخت کی تصدیق کرنا ہے

کسٹمر کی جانچ کو لازمی اتھارٹی کی ویب سائٹ پر درج مالی پابندیوں کی فہرست کی جانچ پڑتال میں شامل ہونا چاہئے. کمپنی کوکسی مالی جرم کے ساتھ کاروبار نہیں کرنا چاہئے

کمپنی کویہ بات واضح کرنی چاہیے کے اِس کے کے وای سی کے اقدامات مناسب ہیں، اِن اقدامات میں شامل ہے:۔

  • گاہکوں کی شناخت؛ جس میں جانچ کو آسان بنایا جائے صرف آی ایم اے کی نشاندہی کے لیے
مستقبل میں آگے بڑھنے کے لئے ضروریات کو فروغ دینے کے لئے کاروباری تعلقات مسلسل نگرانی کرنا چاہئے
  • یہ حالات ممکنہ خطرے کے ہیں لیکن یہ ممکن نہیں ہے کہ یہ خطرہ کرائینگے

کسٹمر کی شناخت کے لیے سٹنڈرد تریقہ یہی ہے کے کسٹمر کے شناختی کاغزات کی جانچ کی جائے اور اُن کاغزات کی تصدیق کی جائے۔ مزید کمپنی کو چاہیے کے گاہک کے ساتھ تمام کاروباری تعلوقات کو سمجھنے کے لئیے کاغزات جمع کئے جایں۔ جانچ کے تریقے پر مکمل یقین ہونا چاہیے کہ وہ گاہک کے متعلق مکمل معلومات دے رہا ہے، اور کمپنی کی خدمات یا منصوعات کسی جرم کے لئے نہیں استعمال ہو رہیں۔

آسان جانچ سے ہم اپنے کسٹمرز کی نگرانی کرتے ہیں تاکہ آنے والے کسی بہھی خطرے سے بچا جا سکے۔ اور آنے والے کسی بھی خطرے کا پہلے سے پتا چلے اور مذید جانچ میں مدد مل سکے۔

  • مزید جانچ تب چاہیے ہوتی ہے جب کسٹمر اور منصوعات کا کوئ بھی کومبینیشن کوئ بڈا خطرہ پیدا کر سکے۔ کمپنی کی طرف سے جانچ کی کئ اقسام ہوتی ہیں۔ زیادہ خطرہ کی نونت تب ہوتی ہے جب منی لانڈرنگ اور دہشتگردی کی فنڈنگ کے زیادہ مواقع کمپنی کی خرمات سے حاصل کئے جا سکیں۔

مزید جانچ کا تریقہ عام طور پر رسک پر مبنی ہوتا ہے۔ مزید معلومات سے کسٹمر کے ذرائع بھی جانے جا سکتے ہیں اور میڈیا چیک بھی جانچ کا حصہ ہو سکتا ہے۔ یہ چیک رسک کے مطانق ہونے چاہیے اور اِس میں اِس بات کا یقین ہونا چاہیے کے کسی بھی قسم کے رسق کی جانچ ممکن ہے۔

کمپنی کسٹمر سے پوچتھی ہے کے وہ کسی پبلک یا سرکاری دفتر کا حصہ ہے یا نہیں اور ایسے پیچے کے لوگوں کو زیادہ رسک کی نوعیت پر پرکھتی ہے۔

شناخت اور توثیق

شناخت دستاویزات، الیکٹرانک یا دونوں کا ایک مجموعہ ہو سکتا ہے. کسٹمر کی شناخت قائم کرنے کے لئے لیا تمام ثبوتوں کا ریکارڈ رکھا جانا چاہئے. شناخت کی دستاویزات اضافی شناخت کے ساتھ ایک حالیہ افادیت بل یا ایک بینک بیان کے طور پر 3 ماہ سے زائد سے کم ہے اور گاہک کا نام اور ایڈریس سے پتہ چلتا ہے

جاری نگرانی

کمپنی کو مسلسل بنیاد پر کسٹمر سرگرمی کی نگرانی کرنا چاہئے

جاری نگرانی میں شامل ہیں
  • لین دین کیُ جانچ، فنڈز کے ذرائع، فنڈز کے ہدایات ، ٹرانزیکشنز ماڈلوں میں تبدیلی،
  • گاہکوں کے بارے میں معلومات کو جدید رکھا جائے

نیٹرنگ گزشتہ ٹرانزیکشن کے طور پر کی جا سکتی ہے اور دستی یا خود کار طریقے سے ہو سکتی ہے. اسٹاف کو جاری نگرانی کے دوران تربیت دی جانی چاہیئے.

ریکارڈ رکھنا

ضابطوں کے مطابق تعمیل کے لئے کافی ریکارڈ رکھنا چاہئے، بشمول کے ریکارڈز:
  • پالیسیوں اور طریقہ کار؛
  • کنٹرول اور مواصلات؛
  • کسٹمر اور ٹرانزیکشن کا خطرہ تجزیہ؛
  • کسٹمر کی وجہ سے محتاط، بشمول کسٹمر کی شناخت اور کسی بھی معاون دستاویزات؛
  • جاری نگرانی؛ اور
  • ٹرانزیکشن اور کاروباری ریکارڈ، ایک فارم میں ایک آڈٹ ٹریل کو مرتب کرنے کے لئے کافی

ریکارڈز کو کاروباری تعلقات کے دوران رکھا جاسکتا ہے اور مزید 5 سال تک، گاہک کے ساتھ تعلقات ختم ہوجانے کے بعد۔ کسی بھی صورت میں کمپنی، اس کے ملازمین، کنسلٹنٹس، یا نمائندے دہشت گردوں کے ساتھ مذاکرات میں مشغول نہ ہوں گے. مشکوک رویے یا اعمال کو اہل حکام کو رپورٹ کیا جائے گا.

کمپنی، حفاظت کے تحت، رضاکارانہ طور پر یا دوسری صورت میں مالیاتی ادارے یا سرکار سے گاہک کے بارے میں معلومات لے دکتی ہے۔ دیگر کسی بھی فایننشیل ادارے سے گاہک، کمپنی یا گروپ کے باری کے بارے میں معلومات حاصل کر سکتی ہے ضرورت کے تحط۔ تاکہ کسی بھی قسم کی منی لانڈرنگ کی سرگرمی کو روکا جا سکے۔

منی لانڈرنگ کے وڈرال پر پابندی

اے ایم ایل قوانین اور قواعد و ضوابط، اراکین صرف ان کے اپنے اکاؤنٹس (بینک اکاؤنٹس، بینک کارڈ، مونٹین اکاؤنٹ، وغیرہ) میں پیسے وڈرا کروا سکتے ہیں.کمپنی صرف کے وای سی کر چکے اراکین کی وڈرا رکویسٹ قبول کرے گی. تیسرے فریقوں کو وڈرا کی درخواستوں کی اجازت نہیں ہے. ٹرانزیکشنز کو انجام دینے کی کوشش میں اگر کمپنی کو کوئ بھی مشکوک جرم اور دہشتگردی سے متعلق سرگرمی نظر آے تو کمپنی کے پاس حق ہے کے ایسے ایکشن کو وقتی طور پر بلاک کر دے یا ہمیشہ کے لئے اُس کسٹمر سے تعلق ختم کر دے اور اپنی پالیسیوں کے مطابق چلے۔

وڈرال صرف رکن کی ذاتی آمدنی، بونس، انعامات وغیرہ پرہو سکتا ہے. ارکان کو تیسرے فریق کے اکاؤنٹ میں لے جانے کے لۓ دوسرے اراکین کے اکاؤنٹس میں فنڈز کو منتقل کرنے کی اجازت نہیں ہے. اکاؤنٹ کے وڈرال کو اراکین کی سرگرمی کی نمائندگی کرنا ضروری ہے.

تمام ملازمین اور ایجنٹوں کو اس پالیسی کی نقل موجود ہے. ان تمام ملازمین اور ایجنٹوں کو ان کی ملازمت کے وقت اس پالیسی کی نقل کے ساتھ فراہم کیا گیا ہے۔

ہم اس پالیسی کے عمل کے سلسلے میں آپ کی سمجھ اور مکمل تعاون کی امید کرتے ہیں.

موجودہ پالیسی 18.01.2017 کو مینجمنٹ کی طرف سے منظور کردی گئی ہے.

اس پالیسی کے بارے میں تمام تحقیقات کو قانونی اور تعمیل کے شعبہ میں بیجھا جائے گا۔